Glossary of the Tribes and Castes of the Punjab and North West Frontier Province, Volume 1

Front Cover
Asian Educational Services, Dec 1, 1996 - 2076 pages
1 Review
  

What people are saying - Write a review

User Review - Flag as inappropriate

بسم اللہ تعالٰی
جھجھ (جھوجھہ) قبیلہ
کے متعلق چند وضاحتیں
از: زبیر احمد گلزاری
اسلا م آباد
موضع جھجھ کلاں تحصیل دیپالپور ضلع اوکاڑہ کا محکمہ مال کا ۱۸۷۱ء کا بندوبست پرقبیلہ جھجھہ کو قریشی ہاشمی کی بجائے قوم جٹ لکھے جانے پر تبصرہ۔ از گلزاری
بندوبست ۱۸۷۱ء کی مندرجہ ذیل عبارت زیر تبصرہ ہے۔
دفعہ اول حال آبادی و حصول ملکیت و وجہ تسمیہ
ضمن اول ذکر آبادی و حصول ملکیت:پہلے یہ رقبہ معہ ایک تہہ کہنہ ملکیت و آباد کردہ قوم دہول کا، کہ آبادی و ویرانی ان کا ہم کو معلوم نہیں ہے،بلا تردد و قبضہ پڑا تھا عرصہءء پشت کا گزرا کہ مسمی سیدا قوم جٹ گوت جہوجہہ مورث اعلی ہم مالکان ،جس سے سلسلہِ نسب ہمارا ملتا ہے ملک عرب سے کسی باعث آکر اول چند مدت تک خاص حجرہ میں بطور رعیت آباد رہا پھر باجازت حاکم ِوقت بلا ادائے نذرانہ و عدم حصول سند،ملکیت رقبہ ہذا کی حاصل کر کے آبادی بنا کر آباد ہوا تب سے گاؤں برابر آباد ہے کبھی ویران نہیں ہوا اور حال حصول ملکیت قوم جہوجہہ ساکنان جہج خورد کا یہ ہے کہ مالکان موضع جہوجہہ خورد بھی مورث ہم مالکان سے ہیں لیکن سلسلہِ نسب ان کا ہم کو معلوم نہیں کہ کہاں سے جا ملتے ہیں انہوں نے دیہہ ہذا سے اوٹھ کر موضع جہوجہہ خورد علیحدہ گاؤں آباد کرلیا۔ دیہہ ہذا کی ملکیت سے ان کا کوئی تعلق نہ رہا لیکن ایک چاہ (کنواں) ڈہڈا والہ واقعہ رقبہ ہذا جو عہد سکھاں میں بہ لاگت خود تعمیر کرایا تھا اور اس چاہ پر مزارعانہ کاشت کر لی تھی۔ اس پر قبضہ مالکانہ کر لیا چنانچہ بندوبست گزشتہ بروئے مقدمہ غیرمال مالک قبضہ قائم رہی کہ تب سے وہ بھی صرف چاہ ڈہڈاوالہ مالک و قابض چلی آتی ہیں اور کوئی چک داخلی و خارجی واقع رقبہ ہذا نہیں ہے اور نہ کوئی تہہ پرانا اس گاؤں کی رقبہ میں واقع ہے البتہ ایک قلعہ پرانا خام رقبہ ہذا میں آبادی دیہہ سے جانب غرب فاصلہ ایک میل واقعہ نمبر خسرہ ۱۴۹۰ مسمار پڑا ہے یہ قلعہ عہد سکھاں میں باوابشن سنگھ جاگیردار و حاکم وقت نے بنوایا تھا لیکن کسی قدر رقبہ علیحدہ اس کے تعلق نہیں ہے۔
ضمن دوم ذکر و وجہہ تسمیہ:
وقت آبادی کے نام گاؤں کا بنام قوم ہم مالکان کے صرف جہوجہہ مشہور ہوا تھا جب سے دوسرا گاؤں جہوجہہ آباد ہوا تب سے واسطے شناخت کے۔۔۔ لفظ کلاں و خورد دیہہ ہذا بنام جہوجہہ کلاں اور دوسرا گاؤں جہوجہہ خورد مشہور اور درج کاغذات سرکاری ہوئے۔
مندرجہ بالا بندوبست رو بکار محکمہ بندوبست بہ تجویز شیخ محمد عیسیٰ صاحب سپرنٹنڈنٹ واقع۱۸۷۱ء کے تحت ہونے والے بندوبست کا اقبال مالکان کا حصہ ہے۔
تبصرہ اور وضاحت تاریخی روشنی میں
"پہلے یہ رقبہ مع ایک تہہ کہنہ ملکیت و آباد کردہ قوم دہول کا کہ حال آبادی و ویرانی ان کا ہم کو معلوم نہیں۔"
حالانکہ یہ معلوم تھا اور اب بھی ہے
 

Selected pages

Contents

Section 1
1
Section 2
29
Section 3
71
Section 4
72
Section 5
89
Section 6
122
Section 7
301
Section 8
304
Section 9
335
Section 10
361
Section 11
393
Section 12
477
Section 13
509
Section 14
527
Copyright

Common terms and phrases

References to this book

All Book Search results »

Bibliographic information